سوال جلد ی ارسال کریں
اپ ڈیٹ کریں: 2019/11/16 زندگی نامہ کتابیں مقالات تصویریں دروس تقریر سوالات خبریں ہم سے رابطہ
زبان کا انتخاب
همارے ساتھ رهیں...
فهرست کتاب‌‌ لیست کتاب‌ها

استادعلام تذکروں میں

استاد علام تذکروں میں"

ہمارے سماج اورمعاشرہ میں یہ عادت رہی ہے کہ اپنے درمیان کی عطیم شخصیتوں کاذکر ان کی وفات کے بعد کرتے ہیں اورجلدی جلدی میں کچھ مختصرسے تذکرکرکے اس کی شخصیت بلندمقام کی تجلیل کیلئے شائع کرتے ہیں۔

لیکن عصرحاضر کے بعض تذکرہ نویس محققین نے علماء اورمراجع کی زندگی میں ان کے حالات لکھنے کاایک نیاباب کھولاہے حجۃ الاسلام سیداحمدحسینی جوکثیرکتابوں کے مولف ہیں انھوں نے علماءامامیہ کاایک تذکرہ بھی لکھاہے جس میں زندہ اورفوت شدہ اہل علم کے تذکرے ہیں ۔

انہیں بزرگ علماء میں جن کاتذکرہ ان کی زندگی میں لکھاگیاہیں ایک استادعلام بھی ہیں اس طرح آپ کی پاکیزہ زندگی تاریخ کاجزبن گئی بعض مولفین ومورخین نے بھی اپنی کتاب میں آپ کاتذکرہ اشارے کے طورپرکیاہے ہم چندکتابوں کے نام تحریرکرتے ہیں جس میں آپ کاذکرہے۔

1۔معارف الرجال۔۔۔ یہ کتاب استادشیخ محمدحرزالدین نجفی کی عربی زبان میں تین جلدوں پرمشتمل ہے دوسری جلدمیں ص268سے ص271اوراسی طرح ص 395 سے ص398 تک استادعلام کاذکر ہے اس کے علاوہ آپ کے والدکے بھی حالات ذکرہیں یہ نجف اشرف سے طبع ہوئی ۔

2۔آئینہ دانشوران۔۔۔۔ یہ فارسی زبان میں سیدعلی رضاریحانی یزدی کی تحریرہے جو1354ہجری میں طبع ہوئی ص25 سے 62 اورص 355 پرآپ کے حالات درج ہیں۔

3۔زیربنائے تمدن وعلوم اسلامی ۔۔۔۔۔یہ عقیقی بخشایشی کی تالیف ہے ،قم سے طبع ہوئی ص180 سے ص184 تک آپ کے حالات ہیں۔

4۔ آثار الحجۃ یہ شیخ محمدرازی کی تالیف ہے قم سے طبع ہوئی ص46 سے ص 53 تک

5۔ مجلہ جہاں پزشکی ص 65 سے ص 70تک

6۔ ریحانۃ الادب ۔۔۔ یہ شیخ محمدمدرس تبریزی کی تالیف ہے دوسری دفعہ 8جلدوں میں شائع ہوئی تیسری جلدمیں ص129 سے ص 134 ص تک

7۔ علماء معاصرین۔۔۔ یہ جلدعلی واعظی خیابان کی تالیف ہے طہران سے 1366 ہجری میں شائع ہوئی ص317سے ص 419تک

8۔گنجینہ دانشمندان ۔۔۔ یہ کتاب شیخ محمدرازی کی 8جلدوں پرمشتمل تالیف ہے دوسری جلدمیں ص37سے ص52 اوراسی طرح ص315سے ص 319تک

9۔گنجینہ دانشوران۔۔۔ تالیف شیخ رحیمی قمی ص15 -16

10۔گنجینہ آثارقم۔۔۔ تالیف شیخ عباس فیض ص652۔653

11۔ اخترتابناک ۔۔۔ تالیف شیخ ذبیح اللہ محلاتی طہران سے طبع ہوئی ص256

12۔اعیان الشیعہ ۔۔۔ تالیف علامہ سیدمحسن امینی عاملی۔

اسی طرح استادعلام کی حیات اورخیراعمال کے تذکرے ،رسالے اورمجلوں میں بھی ان کی زندگی میں شائع ہوئے ہیں لیکن ان کی وفات حسرت آیات کے بعدبہت سے افراد نے رسالوں اور روزناموں میں ان کے حالات زندگی تحریرکئے جیسے نورشمارہ 37 ربیع الاول سنہ 1411ہجری ص48 سے 86 تک فاضل معاصراستادناصرباقری بیدہندی دام ظلہ کے قلم سےاس مجلہ میں آپ کاذکر کیاگیاہے۔