سوال جلد ی ارسال کریں
اپ ڈیٹ کریں: 2019/11/16 زندگی نامہ کتابیں مقالات تصویریں دروس تقریر سوالات خبریں ہم سے رابطہ
زبان کا انتخاب
همارے ساتھ رهیں...
فهرست کتاب‌‌ لیست کتاب‌ها

امام خمینی کے کلمات سے اقتباس

ماہ محرم کی مناسبت سے امام خمینی کے پیغام سے اقتباس

حق سربلند ہے ۔لیکن ہمیں چاہیے کہ کامیابی کے رازکومعلوم کریں کہ ہمار ی کامیابی کا رازکیاتھا؟ تاریخ میں شیعوں کی بقاء کاراز امیرالمومنینؑ کےزمانے سے لیکر آج تک اورجس زمانہ میں شیعہ اقلیت میں تھے اب خداکے لطف سے شیعوں کی تعداد اچھی خاصی ہے۔اوریہ بھی دیکھناچاہیے کہ اسلامی ممالک اوراس مذہب حقہ کی بقاکاکیاراز تھا ؟ ہمیں چاہیے کہ اس راز کی حفاظت ان رازوں میں سب سے اہم رازامام حسینؑ کے واقعات ہیں ۔سیدالشہداء نے اپنے عمل سے اسلام کی ضمانت اورحفاظت کی ہے اوراپنے قیام سے اموی قوم کوشکست دی اورشہیدہوئے ۔ماضی میں جو مجالس منعقدہوئی ہیں وہ ائمہ کے حکم سے ہوئی ہیں ۔

 لہذاجوان نسل یہ خیال نہ کرے کہ اسن مجالس میں صرف گریہ وبکاہوتاہے تھا اوراب ہمیں گریہ وبکا کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ یہ ایک اشتباہ ہے(کج فکری ہے)امام باقرؑ نے اپنی زندگی کے آخری لمحات میں وصیت کی کہ منیٰ میں کسی شخص کو اجرت پر معین کریں جو ہم پر گریہ وبکا کرے اس کی کیا ضرورت تھی ؟ کیاامام باقرؑ کسی کے محتاج تھے؟ وہ بھی میدان منیٰ میں ایام حج میں دس سال امام پر گریہ وبکا کریں کیوں؟ (جی ہاں )یہی انسان کیلئے ایک بنیادی اورسیاسی نکتہ ہے چہرہ ظالم سے نقاب اٹھانے کیلئے ،درحقیقت یہ چیزیں انسان کی توجہ کواس بات کی طرف مبذول کرتی ہیں کہ انسان ظالم کے ظلم سے آگاہ ہوجائے کہ اس سے مظلوم کوتقویت حاصل ہوتی ہے۔ کربلانے جوانوں کاخون دیاہے ہمیں کہ مقصد سرکارسیدالشہداءکی حفاظت کریں ۔

روز عاشورہ کے یہ ماتمی دستے حزن وملال کے ساتھ ظلم وبربریت کے خلاف ایک مظاہرہ بھی ہے کہ جس میں سیاسی پہلوبھی شامل ہیں ۔اسلامی ممالک میں امت مسلمہ روزتاسوعاوعاشورہ کے اس عظیم الشان ماتمی دستے میں شرعی قوانین کومدنظررکھیں ۔یہ ماتمی دستے جو شان وشوکت کے ساتھ ہر جگہ موجودہیں کن بازؤں میں اتنی طاقت ہے جوایسے اجتماع کااہتمام کریں؟ ان لوگوں کی یکجہتی وہماہنگی کو آپ کس دنیامیں تلاش کریں گے؟ہندوستان ،پاکستان ،انڈونیشیا،عراق،افغانستان جدھربھی آپ تشریف لے جائیں ہرجگہ ایک ہی کیفیت ہے۔جولوگ مجلس کے مخالف ہیں یہ وہی لوگ ہیں جو علماء کے مخالف تھے اوریہ چاہتے ہیں کہ ہمیں ذلیل ورسواکریں۔

مجلس حسینی امام خمینی ؒ کی نظرمیں

جب صدراسلام کے اہل شرور وفتن نے دین کی بنیاد کو کمزورکردیااورسوائے چندافراد کے اورکوئی نہ رہا توخداوندعالم نے حسینؑ بن علیؑ کے دل کومتحرک کیا(منتخب کیا)آپ نے اپنی فداکاری وجانفشانی سے قوم کوخواب غفلت سے بیدار کیا۔خدانے امام حسینؑ کے عزاداروں کیلئے بیحد ثواب معین کیاہے تاکہ لوگ غفلت میں نہ رہیں ،اورمقصدکربلاجسکی بنیاد ظلم وجورکاخاتمہ کرنے اورتوحیدوعدالت کی طرف لوگوں کی ہدایت کرنے کیلئے رکھی گئی تھی پامال ہونے نہ دیں ۔اس صورت میں ضروری ہے کہ عزاداروں کیلئے ایسے ثواب مقرر کئے جائیں،جس طرح بھی ممکن ہوسکے زحمت وپریشانی کے بعد بھی لوگ اس فعل سے دستبردارنہ ہوں ورنہ ظالمین مثل سرعت برق امام حسینؑ کے زحمات وخدمات کوپامال کردیتے کہ جس سے پیغمبرؐ اسلام کی کوششوں پرپھرجاتا۔سیدالشہداء نے اسلام کی فریاد رسی کی اوراسلام کو نابودہونے سے بچالیا۔امام حسینؑ کی مجلس ،حسینی مکتب وفکرکے تحفظ کیلئے ہے۔ جولوگ یہ کہتے ہیں کہ امام حسینؑ کی مجلس برپانہ کرو درحقیقت یہ لوگ بے شعور ہیں اوریہ نہیں جانتے کہ مقصدومکتب سیدالشہداء کیاتھااورکیاہے؟ دراصل اسی گریہ وبکانے اس مکتب کی حفاظت کی ہے۔پچھلے 1400سالوں سے اب تک انھیں منبروں اورمجالس نے ہماری حفاظت کی ہے۔

محروم وصفرکاخاص اہتمام کریں کیونکہ ہمارے پاس جوکچھ بھی ہے محرم وصفرہی کے بدولت ہے۔