سوال جلد ی ارسال کریں
اپ ڈیٹ کریں: 2019/9/19 زندگی نامہ کتابیں مقالات تصویریں دروس تقریر سوالات خبریں ہم سے رابطہ
زبان کا انتخاب
همارے ساتھ رهیں...
فهرست کتاب‌‌ لیست کتاب‌ها

انوار قدسیہ 2

انور قدسیہ معصومین ؑ کی حیات طیبہ کامختصرتذکرہ

معصوم دوم ۔امیرالمؤمنین علیہ السلام

آپ کانام ونسب :۔ علی ؑ بن ابی طالب بن ہاشم بن عبدالمناف بن قضی بن کلاب بن مرہ بن غالب فہربن مالک بن نضربن کنانہ بن حزیمہ بن مدرکہ بن الیاس بن مضربن نزاربن معدبن عدنان تھا۔

آپ کے مشہورومعروف القاب:۔امیرالمؤمنینؑ ،امام المتقین،اسداللہ الغالب ،یعسوب الدین،ولی اللہ الاعظم ،مرتضیٰ، حیدرکرار۔

آپ کی کنیت :۔ ابوالحسن ،ابوتراب ،ابوزینب ،ابوالحسنین ،ابوالسبطین۔

آپ کے پدربزرگوار:عمران تھے بعض روایات میں بھی ملتاہےکہ آپکے والدکانام عبدمناف اورکنیت ابوطالب(طالب آپ کےبڑے فرزندتھے)تھی اورشیخ البطحیٰ کہلاتے تھے ۔

آپکی والدہ ماجدہ :فاطمہ بنت اسد بن ہاشم بن عبدمناف الی آخرہ۔

یوم ولادت: یوم جمعہ 13رجب سنہ 30 عام الفیل۔

محل تولد: مکہ مکرمہ جوف خانہ کعبہ۔خسرو پرویز کے عہدسلطنت میں کہ جوعجم کے بادشاہ تھے۔پوری عمر 63سال ،مدت امامت 11ہجری سے لیکر29 ہجری تک ۔عام مسلمانوں کے حوالے سے آپکی مدت خلافت بعدخلافت عثمان 4سال 9 مہینہ تھی۔

دلائل امامت: نصوص قرآنیہ ،احادیث نبوی مثلاً حدیث منزلت،حدیث غدیر، حدیث ثقلین وغیرہ۔ اوراکثر معجزات جو کتابوں میں درج ہے مثلاً رد شمسیا سنگریزوں سے کلام کرنا،غیب کی باتیں اورآنے والے حوادث کی خبردینایہ سب آپکی امامت پردلیل ہیں۔

ازواج: 1۔ سیدہ فاطمہ زہراء سلام اللہ علیہا 2۔ خولہ بنت جعفرابن قیس 3۔ ام حبیب بنت ربیعہ 4۔ ام البنین فاطمہ بنت حزام

5۔ لیلی بنت مسعود 6۔ اسماء بنت عمیس  7۔ ام سعیدبنت عروہ بن مسعودالثقفی 8۔ ام شعیب المخزومیہ 9۔ امامہ بنت ابی العاص

10۔ محیاۃ بنت امرء القیس۔

یہ مخدرات اورانکے علاوہ ائمہ اطہارکی بیویاں بیک وقت عقد دائمی کی صورت میں چارسے زیادہ نہیں رہیں بقیہ بحیثیت متعہ تھیں یاملکیت وکنیز ہونے کے سبب آپکی زوجیت میں آئیں۔

اولاد ذکور:1۔ امام حسنؑ ۔  2۔ امام حسینؑ ۔  3۔ محمدحنفیہ ۔ 4۔ عمر ۔  5۔ ابوالفضل العباسؑ ۔  6۔ جعفر ؑ۔  7۔ عبداللہ الاکبر ۔

 8۔ عثمان ۔ 9۔محمداصغر۔  10۔ عبداللہ کہ جنکی کنیت ابوبکرتھی۔   11۔یحیی ۔ 12۔ محسن کہ جوشکم مادرمیں شہیدہوئے جبکہ سیدہ عالمیان کے اوپرجلتاہوا دروازہ گرایاگیا۔

اولاد اناث:1۔ زینب کبریٰ ؑ جنکو عقیلہ بنی ہاشم اوربطلہ کربلاکے لقب سے یادکیاجاتاہے۔ 2۔ زینب صغریٰ کہ جنھیں ام کلثوم کہاجاتاہے۔ 3۔ رقیہ کبریٰ ۔ 4۔ ام حسن ۔ 5۔ نفیہ ۔ 6۔ رقیہ صغریٰ ۔ 7۔ ام ہانی ۔ 8۔ ام کرام۔  9۔ ام جعفر ۔ 10 ۔امامہ۔

11۔ ام سلمہ۔ 12۔ خدیجہ۔ 13۔ فاطمہ۔

یوم شہادت:۔ روزیکشنبہ یادوشنبہ 21 رمضان المبارک سنہ 40 ھ ایک روایت کے مطابق شب جمعہ آپ اس دنیاسے رخصت ہوئے۔

سبب شہادت:۔ عبدالرحمن ابن ملجم کازہرآلودتلوارمارنا(قسطنطنیہ کے عہدحکومت میں)

مدفن:۔ نجف اشرف بنی امیہ کے جور وستم کی وجہ سے آپ کی قبرمطہرزمانہ ہارؤن رشیدتک مخفی رہی۔