سوال جلد ی ارسال کریں
اپ ڈیٹ کریں: 2019/11/13 زندگی نامہ کتابیں مقالات تصویریں دروس تقریر سوالات خبریں ہم سے رابطہ
زبان کا انتخاب
همارے ساتھ رهیں...
فهرست کتاب‌‌ لیست کتاب‌ها

قصیدہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ معجزجلالپوری

ہجرکی شب کرلئے روشن جو اشکوں کے چراغ

جستجوہی میں تری مجھ کوقرار آئے تو کیا

کہہ کے دیوانہ مجھے دھوکہ کوئی کھائے توکیا

درد فرقت کے سبب آنکھوں میں آنسو خشک ہیں

ہجرکی ہے آگ گر پانی میں لگ جائے توکیا

میں نہ سمجھوں گامحبت کی اسے ناکامیاں

حسن پردے میں رہے اورعشق شرمائے توکیا

ہجرکی شب کرلئے روشن جو اشکوں کے چراغ

پھر ستارے صبح کے دامن پہ تھرائے توکیا

وہ نہ آئیں گے اگردل میں نہیں زور کشش

لاکھ پردے سے کوئی نظروں کو ٹکرائے توکیا

کل اگر چاہا خدانے روبرو ہوجائیں  گے

آج نظروں کوبچا کرہم سے کترائے توکیا

بن گیا ہے عقدہ لاحل تمہارا انتظار

وقت کی رفتار اسکو لاکھ سلجھائے توکیا

ایک عالم دید کی خواہش میں اس کے بے قرار

پردہ غیبت میں رہ کے وہ نہ گھبرائے توکیا

خاک ہوکر نور سے ہم خواہش جلوہ کریں

غیر کو اپنی تجلی وہ نہ دکھلائے توکیا

بن ترے ساقی دوران منہ لگاؤں گانہ میں

میرے پیمانے میں کوثر ہی اترآئے توکیا

انکے پردے پہ ٹھہرسکتی ہے یوسف کی نگاہ

حسن یوسف پہ یہ دنیالاکھ اترائے توکیا

پھوٹنے کو غیب سے ہے مہرایمان کی کرن

تاحد امکان سیاہی کفر پھیلائے تو کیا

ناز اٹھانے کو تراقدرت نے پردے میں رکھا

خود وہ اپنی اس ادا پہ ناز فرمائے توکیا

ہے امام وقت اورمختار کل کائنات

اپناپرچم بھی سرطوبیٰ وہ لہرائے توکیا

درپہ جب اترے ستارہ اورٹکرے چاندہو

پھراگرڈوباہوا سورج نکل آئے توکیا

شمس کی رجعت پہ جب ہوتا نہیں ہے اعتراض

پردہ غیبت سے وہ باہر جو آجائے توکیا

اس کا دریااس کی موجیں اسکا جب آپ رواں

پھرمصلیٰ اس کا پانی پہ جو بجھ جائے توکیا

غم تواس کاہے نہیں حاصل حضوری کاشرف

آرزوئیں سب عریضہ میری برلائے توکیا

سرپہ ہیں سایہ فگن جب قائم آل عبا

حشر کے میدان میں سورج آگ برسائے توکیا

دل میں ان کاغم ہے اورآنکھوں میں ان کاانتظار

ساتھ میں ان کے اگرمعجز بھی ہوجائے توکیا