حاج سید عادل علوی کی اسلامی معلومات کامرکزسایٹ کے جدید ترین مطالبhttp://www.alawy.net/11 ذی قعدہ(1440ھ)ولادت باسعادت حضرت امام رضا علیہ السلام کےموقع پرحضرت امام علی بن موسی الرضا علیه السلام کی ولادت با سعادت کے بارے میں مختلف اقوال موجود هیں ان میں سے جو مشہور ومعروف قول 11 ذیقعدہ 148 ہجری ہے۔ القاب میں سے "رضا"امام عليہ السلام كا مشہور ترين لقب ہے كہ حضرت كي شہادت كے بعد طویل مدت گذر جانے كےباوجود بھي امام عليہ السلام كو اسي مبارك لقب"رضا"سے ياد كرتے ہيں ۔ وہ اس وجہ سے"رضا" كہلائے كہ آسمانوں ميں پسنديدہ اور زمين ميں بھي خداوند متعال اس كے انبياء اور آئمۂ ہديٰ عليہم السلام اُن سے خوشنود ہيں‘‘۔اس مبارك لقب كي ايك اور وجہ يہ بيان كي گئي ہے كہ چونکہ موافق و مخالف تمام لوگ اس مہربان امامؑ سے راضي و خوشنود تھے۔http://www.alawy.net/urdu/news/15962/یکم ذی قعدہ(1440ھ)ولادت حضرت فاطمہ معصومہ سلام اللہ عليہا کےموقع پرجناب معصومہ کی ولادت پہلی ذیقعدہ ۱۷۳ ہجری قمری کو مدینہ منورہ میں ہوئی۔ بچپنے میں ہی امام موسیٰ ابن جعفر(ع) کی بغداد میں شہادت واقع ہو گئی اور آپ آٹھویں امام علی ابن موسی الرضا(ع) کی کفالت میں قرار پائیں۔http://www.alawy.net/urdu/news/15941/25شوال المکرم(1440ھ)امام جعفر صادق علیہ السلام کی شہادت کےموقع پر25 شوال 148 ہجری بعض کےبقول حضرت امام جعفرصادق علیہ السلام کی شہادت کا دن ہے۔ آپؑ 65سال كى عمر ميں منصور دوانیقی كے ذريعہ زہر سے شہيد ہوئے آپ كے جسم اقدس كو آپ كے پدر گرامى كے پہلو ميں بقيع ميں سپرد خاك كرديا۔ http://www.alawy.net/urdu/news/15931/21رمضان المبارک (1440ھ)شہادت امیرالمومنین علی علیہ السلام کےموقع پرعالم اسلام بلکہ عالم بشریت کی مفتخر ترین ہستیوں میں مرسل اعظم ، نبی رحمت حضرت محمّد مصطفیٰ ﷺ کے بعد سب سے پہلا نام امیر المومنین حضرت علی ابن ابی طالب علیہ السلام کا آتا ہے، لیکن آپ سے متعلق محبت و معرفت کی تاریخ میں بہت سے لوگ عمدا یا سہوا افراط و تفریط کا بھی شکار ہوئے ہیں اور شاید اسی لیے ایک دنیا دوستی اور دشمنیوں کی بنیاد پر مختلف گروہوں اور جماعتوں میں تقسیم ہو گئی ہے 21 رمضان المبارک کو علوی زندگی کا وہ صاف و شفاف چشمہ جو دنیائے اسلام کو ہمیشہ سیر و سیراب کر سکتا تھا، ہم سے چھین لیا گيا لہذا یہ مصیبت ایک دائمی مصیبت ہے اور آج بھی ایک دنیا علی علیہ السلام کے غم میں سوگوار اور ماتم کناں ہے۔http://www.alawy.net/urdu/news/15838/15رمضان المبارک(1440ھ)ولادت امام حسن مجتبیٰ علیہ السلام کےموقع پر آپ ۱۵/ رمضان ۳ ہجری کی شب کو مدینہ منورہ میں پیداہوئے ۔ مورخین کا کہنا ہے کہ رسول اکرم ﷺ کے گھر میں آپ کی پیدائش اپنی نوعیت کی پہلی خوشی تھی۔ آپ کی ولادت نے رسول خداﷺ کے دامن سے مقطوع النسل ہونے کا دھبہ صاف کردیا اور دنیا کے سامنے سورہ کوثرکی ایک عملی اور بنیادی تفسیر پیش کردی۔ آپ کی کنیت " ابو محمد " تھی اور آپ کے القاب بہت کثیرہیں: جن میں طیب،تقی، سبط اور مجتبیٰ زیادہ مشہور ہے۔http://www.alawy.net/urdu/news/15811/ماہ مبارک رمضان(1440 ہجری) میں استاد سید عادل علوی کے دروس ماہ رمضان(1440 ہجری) میں استاد سید عادل علوی کے دروس حسینیہ نجف الاشرف – قم المقدسہ 1 سے 15 رمضان المبارک 1440 ہجری حسینیہ امامین کاظمین – قم المقدسہ 15 سے 30 رمضان المبارک 1440 ہجری 11:30 بجےراتhttp://www.alawy.net/urdu/news/15803/علم اور عالم کی یا د میں سالانہ"تین روزہ مجالس اباعبداللہ الحسین(ع)" کاانعقادعالم ربانی حضرت آیت الله مرحوم سید علی علوي (رحمۃ الله علیہ )کی 37ویں"سالگرہ "کے موقع پر علم اور عالم کی یا د کو زندہ رکھنے کیلئے "تین روزہ مجالس" حسینی کاانعقاد کیا گیا ہے۔ http://www.alawy.net/urdu/news/15759/15شعبان المعظم(1440ھ)ولادت امام مہدی(عجل اللہ فرجہ)کےموقع پر بارہویں امام معصوم حضرت حجت بن الحسن المہد ی ، امام زمانہ (عجل اللہ تعالی فرجہ) نیمہ شعبان، ٢٥٥ ہجری ، شہر سامراء میں متولد ہوئے۔ آپ پیغمبر اکرمﷺ کے ہم نام (م ح م د) ہیں اور آپ کی کنیت بھی حضرت (ابوالقاسم) ہے ۔ لیکن معصوم نے امام زمانہ کا اصلی نام لینے سے منع کیا ہے ۔ آپ کے والد کا نام امام حسن عسکری علیہ السلام اور والدہ کا نام نرجس ہے نرجس خاتون کو ریحانہ ، سوسن اور صقیل بھی کہا جاتا ہے آپ کی عظمت و معنویت اس قدر تھی کہ امام ہادی علیہ السلام کی بہن حکیمہ خاتون جوکہ خاندان امامت کی باعظمت خاتون ہیں ، آپ کو اپنے خاندان کی سردار اور اپنے آپ کو ان کی خدمت گزار کہتی تھیں۔ http://www.alawy.net/urdu/news/15733/11شعبان المعظم(1440ھ) ولادت حضرت علی اکبر عليه السلام کےموقع پر مشہور قول کے مطابق آپ امام حسین علیہ السلام کے بڑے بیٹے ہیں جو کربلا میں شہید ہو گئے۔ آپ کی والدہ گرامی لیلی بنت ابی مرّہ بن عروۃ بن مسعود ثقفی ہیں۔ آپ کی کنیت ابو الحسن ہے اور محدث قمی کے بقول بعض روایات اور زیارت ناموں سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ آپ شادی شدہ تھے اور کچھ اولاد بھی رکھتے تھے۔ آپ عالم ، پرہیزکار، رشید اور شجاع جوان تھے اور انسانی کمالات اور اخلاقی صفات کے عظیم درجہ پر فائز تھے۔ آپ کے زیارت نامہ میں وارد ہوا ہے:سلام ہو آپ پر اے صادق و پرہیزگار، اے پاک و پاکیزہ انسان، اے اللہ کے مقرب دوست،کتنا عظیم ہے آپ کا مقام، اور کتنی عظمت سے آپ اس کی بارگاہ میں لوٹ آئے ہیں میں گواہی دیتا ہوں کہ خدا نے راہ حق میں آپ کی مجاہدت کی قدر دانی کی اور اجر و پاداش میں اضافہ کیا اور آپ کو بلند مقام عنایت فرمایا۔http://www.alawy.net/urdu/news/15729/5شعبان المعظم(1440ھ)ولادت امام زين العابدين عليه السلام کےموقع پر حضرت امام زين العابدين عليه السلام السلام کی تاریخ ولادت کے بارے میں مورخین اور سیرہ کی کتاب لکھنے والوں میں اختلاف ہے، بعض نے 5 شعبان اور بعض نے 7شعبان اور بعض نے9 شعبان اور بعض نے15 جمادی الاول ولادت کی تاریخ بیان کیا ہے اور دن کے ساتھ ساتھ سال کے بارے میں بھی اختلاف نظر ہے، بعض نے سن 38 ھ ، بعض نے سن 36 ھ ، اور بعض نے 37ھ ، بیان کیا ہے۔ چوتھے امام زین العابدین علیہ السلام کا نام علی علیہ السلام ہے۔ آپ حسین بن علی بن ابیطالب علیہ السلام کے فرزند ارجمند ہیں، آپ کے القاب میں سجاد اور زین العابدین بہت مشہور ہیں۔http://www.alawy.net/urdu/news/15685/